Moawin.pk is an educational web portal which provides a comprehensive platform to Pakistani students, parents, teachers and career seekers.

 

یونیورسٹی کا تصور

یونیورسٹی کا تصور

اعلی تعلیم کا حصول ہمیشہ سے زیر بحث رہا ہے۔ چاہے وہ بیرون ملک میں حاصل کی جا رہی ہو یا اپنے ملک میں حاصل کی جا رہا ہو۔ یونیورسٹی کا تصور جب سامنے آتا ہے تو اس کے حوالے سے اعلی تعلیم کے بعد دوسری بات ریسرچ کی تعلیم کی آتی ہے۔ ہمارے ملک پاکستان میں کئی معیاری یونیورسٹیاں قائم ہیں۔ جہاں پر نہ صرف اعلی تعلیم کے فروغ اور ترقی کے لیے ہمہ وقت کوششیں جاری رہتی ہیں بلکہ اس کے ساتھ ہی ریسرچ ورک کے کام کے معیار کو برقرار رکھنے کے لیے محنت کی جاتی ہے۔ ہمارے ملک سے ہر سال سینکڑوں گریجویٹس، پوسٹ گریجویٹس اور پی ایچ ڈی ڈآکٹر یونیورسٹیاں پیدا کر رہی ہیں۔ لیکن جہاں یونیورسٹی کی بات آتی ہے وہاں یہ بات بھی قابل غور ہوتی ہے کہ وہاں تعینات تدریسی عملہ کتنا تعلیم یافتہ، تربیت یافتہ اور تجربہ کار ہے۔ کیونکہ ظاہر ہے یونیورسٹی کی تعلیم ایک انتہائ درجہ کی تعلیم ہے جس کے بعد ایک فرد عملی زندگی میں قدم رکھتا ہے۔

بنیادی طور پر یونیورسٹی کیا ہے ہمارے تصورات میں یونیورسٹی جامع تعلیم کا ایک ادارہ ہے جہاں پر لا متناہی مواقع موجود ہوتے ہیں اور یونیورسٹی کا تعلیم فرد کو شعور کے اعلی درجے تک لے جاتی ہے۔ بنیادی طور پر لفظ یونیورسٹی لاطینی زبان کا لفظ ہے جس کو لاطینی میں یونیورسیٹاز کہا گیا ہے۔ اس کا ایک سیدھا سا مطلب سکالرز اور پروفیسرز کا ایک گروپ ہے۔ ایک لاطینی ڈکشنری کے مطابق جو کہ چارلٹن ٹی لیوائس نے مرتب کی تھی لفظ یونیورسیٹاز کو کچھ اس طرح پیش کرتی ہے کہ "کئی افراد جو کسی ایک ادارے سے منسلک ہوں،وہ ادارہ یا تو کمپنی ہو سکتا ہے کوئی کمیونٹی یا کاروپوریشن" کسی بھی دوسرے اداروں کی طرح یونیورسٹی اپنے قوائد و ضوابط خود مرطب کرتی ہے اور اس کے علاوہ اپنے ممبران کی تعلیم کا معیار بھی خود مقرر کرتی ہے۔

یونیورسٹی کا ایک اور اہم تصور یہ بھی ہے کہ جہاں تعلیم کے حصول کی آزادی ہو۔ اس حوالے سے اٹلی (Italy)  کا ایک تعلیمی ادارہ جس کا نام یونیورسٹی آف بولوگنا ( University of Bologna )ہے جو کہ سن 1088ء میں قائم کیا گیا جس نے اپنا اکیڈمک چارٹر تشکیل دیا اور یہ چارٹر ایک قانون کی حیثیت سے سن 1158 میں نافذ العمل ہوا تھا جس کے مطابق ایک سکالر کا یہ حق بنتا ہے کہ وہ تعلیم کی ترقی اور فروغ کے لیے جہاں تک سفر کرنا چاہے وہ کر سکتا ہے۔ اور ایک سکالر کو یہ حق دیا جاتا ہے کہ وہ تعلیم کے فروغ کے لیے کسی بھی جگہ جا سکتا ہے۔

یونیورسٹی کا تصور ہمیں ذیادہ تر یورپی ممالک میں ملتا ہے جہاں کئی سالوں پہلے تعلیمی ترقی کے حوالے سے بہت کام ہوا۔ یورپی ممالک میں کئی صدیوں پہلے یونیورسٹی کی تعلیم کی بنیاد رکھی گئ اور ذیادہ تر ریسرچ کاکام بھی یورپی ممالک میں ہی شروع ہوا اور پھر آہستہ آہستہ یونیورسٹی کا تصور پوری دنیا میں پھیلتا چلا گیا۔ اور اسی طرح ریسرچ کے کام میں بھی بے پناہ ترقی ہوئی اور آج کے اس جدید دور میں یونیورسٹی کی تعلیم اور ریسرچ کے بغیر تعلیم کو یقینا ادھورا سمجھا جاتا ہے۔



Tags

Education , Higher Education , University


Comments




Write for us - www.moawin.pk

© Moawin, All rights reserved
Design & Developed by: Mark1technologies